تجھ سے بچھڑ کے یوں تو بہت جی اداس ہے

والی آسی

تجھ سے بچھڑ کے یوں تو بہت جی اداس ہے

والی آسی

MORE BYوالی آسی

    تجھ سے بچھڑ کے یوں تو بہت جی اداس ہے

    لیکن یہ لگ رہا ہے کہ تو میرے پاس ہے

    دریا دکھائی دیتا ہے ہر ایک ریگ زار

    شاید کہ ان دنوں مجھے شدت کی پیاس ہے

    حیرت سے سب کو تکتے ہیں پتھر بنے ہوئے

    جادوگروں کے شہر میں اپنا نواس ہے

    تم کو سنا رہا ہے لطیفے جو رات دن

    وہ آدمی تو تم سے زیادہ اداس ہے

    ویراں ہے میرا گھر بھی اسی طرح دوستو

    کالج میں جس طرح کوئی اردو کلاس ہے

    پوچھو کوئی سوال ملے گا غلط جواب

    والیؔ ہر ایک شخص یہاں بد حواس ہے

    مآخذ :
    • کتاب : Mujalla Dastavez (Pg. 105)
    • Author : Aziz Nabeel
    • مطبع : Edarah Dastavez (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY