تجھ سے اک ہاتھ کیا ملا لیا ہے

عمران عامی

تجھ سے اک ہاتھ کیا ملا لیا ہے

عمران عامی

MORE BYعمران عامی

    تجھ سے اک ہاتھ کیا ملا لیا ہے

    شہر نے واقعہ بنا لیا ہے

    ہم تو ہم تھے کہ اس پری رو نے

    آئنے کا بھی دل چرا لیا ہے

    ورنہ یہ سیل آب لے جاتا

    شہر کو آگ نے بچا لیا ہے

    ایسی ناؤ میں کیا سفر کرنا

    جس نے دریا کو دکھ سنا لیا ہے

    کوزہ گر نے ہماری مٹی سے

    کیا بنانا تھا کیا بنا لیا ہے

    دیکھیے پہلے کون مرتا ہے

    سانپ نے آدمی کو کھا لیا ہے

    جانے والوں کو اب اجازت ہے

    ہم نے اپنا دیا بجھا لیا ہے

    جب کوئی بات ہی نہیں عامیؔ

    آسماں سر پہ کیوں اٹھا لیا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY