تجھے ہم یاد ہر دم اے ستم ایجاد کرتے ہیں

آسی رام نگری

تجھے ہم یاد ہر دم اے ستم ایجاد کرتے ہیں

آسی رام نگری

MORE BYآسی رام نگری

    تجھے ہم یاد ہر دم اے ستم ایجاد کرتے ہیں

    یوں ہی اپنے دل ناشاد کو ہم شاد کرتے ہیں

    بسا کر ایک دنیا آج رنج و یاس و حرماں کی

    ہم اپنے دل کے ویرانے کو پھر آباد کرتے ہیں

    اسیری سے ہمیں کچھ ہو گئی ہے ایسی انسیت

    قفس سے چھوٹ کر بھی ہم قفس کو یاد کرتے ہیں

    ہماری فطرت مردانہ کی تفریح ہوتی ہے

    کرم کرتے ہیں ہم پر آپ گر بیدار کرتے ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Harf Harf Khowab (Pg. 132)
    • Author : asi ramnagari
    • مطبع : Nasim Pathara Po. Moghalsarai (Varansi) (1992)
    • اشاعت : 1992

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY