تم آ گئے ہو جب سے کھٹکنے لگی ہے شام

اویس احمد دوراں

تم آ گئے ہو جب سے کھٹکنے لگی ہے شام

اویس احمد دوراں

MORE BYاویس احمد دوراں

    تم آ گئے ہو جب سے کھٹکنے لگی ہے شام

    ساغر کی طرح روز چھلکنے لگی ہے شام

    شاید کسی کی یاد کا موسم پھر آ گیا

    پہلو میں دل کی طرح دھڑکنے لگی ہے شام

    کچھ تو ہی اپنے خون رمیدہ کی لے خبر

    پلکوں پہ قطرہ قطرہ ٹپکنے لگی ہے شام

    صحرائے پر سکوت میں کچھ آہوؤں کے ساتھ

    پھر کس کی آرزو میں بھٹکنے لگی ہے شام

    کیا جانے آج کیوں کسی مزدور کی طرح

    سورج غروب ہوتے ہی تھکنے لگی ہے شام

    کچھ اور آئنہ میں سنورنے لگے ہیں وہ

    جس دن سے ان پہ جان چھڑکنے لگی ہے شام

    دوراںؔ سنا ہے صورت گیسوئے عنبریں

    امسال پھر چمن میں مہکنے لگی ہے شام

    مآخذ:

    • کتاب : Ababeel (Pg. 144)
    • Author : Owais Ahmad Dauran
    • مطبع : label litho press Ramna Road Patna-4 (1986)
    • اشاعت : 1986

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY