تم بھی ہو خنجر خوشاب بھی ہے

حسن بریلوی

تم بھی ہو خنجر خوشاب بھی ہے

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    تم بھی ہو خنجر خوشاب بھی ہے

    اور یہ خانماں خراب بھی ہے

    وہ بھی ہیں ساغر شراب بھی ہے

    چاند کے پاس آفتاب بھی ہے

    بولے وہ بوسہ ہائے پیہم پر

    ارے کمبخت کچھ حساب بھی ہے

    پوچھتے جاتے ہیں یہ ہم سب سے

    مجلس وعظ میں شراب بھی ہے

    دیکھ آؤ مریض فرقت کو

    رسم دنیا بھی ہے ثواب بھی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY