تم غیروں سے ہنس ہنس کے ملاقات کرو ہو

اقبال عظیم

تم غیروں سے ہنس ہنس کے ملاقات کرو ہو

اقبال عظیم

MORE BYاقبال عظیم

    تم غیروں سے ہنس ہنس کے ملاقات کرو ہو

    اور ہم سے وہی زہر بھری بات کرو ہو

    بچ بچ کے گزر جاؤ ہو تم پاس سے میرے

    تم تو بخدا غیروں کو بھی مات کرو ہو

    نشتر سا اتر جاوے ہے سینے میں ہمارے

    جب ماتھے پہ بل ڈال کے تم بات کرو ہو

    تقوے بھی بہک جاویں ہیں محفل میں تمہاری

    تم اپنی ان آنکھوں سے کرامات کرو ہو

    پھولوں کی مہک آوے ہے سانسوں میں تمہاری

    موتی سے بکھر جاویں ہیں جب بات کرو ہو

    ہم غیروں کے آگے تمہیں کیا حال بتائیں

    پاس آ کے سنو دور سے کیا بات کرو ہو

    کیا کہہ کے پکاریں گے تمہیں لوگ یہ سوچو

    اقبالؔ پہ تم ظلم تو دن رات کرو ہو

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    سلمان علوی

    سلمان علوی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY