تم گلستاں سے گئے ہو تو گلستاں چپ ہے

مخدومؔ محی الدین

تم گلستاں سے گئے ہو تو گلستاں چپ ہے

مخدومؔ محی الدین

MORE BYمخدومؔ محی الدین

    تم گلستاں سے گئے ہو تو گلستاں چپ ہے

    شاخ گل کھوئی ہوئی مرغ خوش الحاں چپ ہے

    افق دل پہ دکھائی نہیں دیتی ہے دھنک

    غمزدہ موسم گل ابر بہاراں چپ ہے

    عالم تشنگیٔ بادہ گساراں مت پوچھ

    مے کدہ دور ہے مینائے زر افشاں چپ ہے

    اور آگے نہ بڑھا قصۂ دل قصۂ غم

    دھڑکنیں چپ ہیں سرشک سر مژگاں چپ ہے

    شہر میں ایک قیامت تھی قیامت نہ رہی

    حشر خاموش ہوا فتنۂ دوراں چپ ہے

    نہ کسی آہ کی آواز نہ زنجیر کا شور

    آج کیا ہو گیا زنداں میں کہ زنداں چپ ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY