تم کو نہیں ہے یاد ابھی کل کی بات ہے

نظر برنی

تم کو نہیں ہے یاد ابھی کل کی بات ہے

نظر برنی

MORE BYنظر برنی

    تم کو نہیں ہے یاد ابھی کل کی بات ہے

    باہم تھا اتحاد ابھی کل کی بات ہے

    منزل تھی ایک جس پہ بہم گامزن رہے

    بالکل نہ تھا تضاد ابھی کل کی بات ہے

    اک روشنی تھی دل میں بہت پاک و صاف تھے

    ایسا نہ تھا عناد ابھی کل کی بات ہے

    بنیاد خود ہی آپ نے رکھی نفاق کی

    شیر و شکر تھے شاد ابھی کل کی بات ہے

    صحن چمن میں اپنے نظرؔ تھی عجب بہار

    تھا دور ابر و باد ابھی کل کی بات ہے

    مآخذ

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY