تمہارے بعد رہا کیا ہے دیکھنے کے لیے

آفتاب حسین

تمہارے بعد رہا کیا ہے دیکھنے کے لیے

آفتاب حسین

MORE BYآفتاب حسین

    تمہارے بعد رہا کیا ہے دیکھنے کے لیے

    اگرچہ ایک زمانہ ہے دیکھنے کے لیے

    کوئی نہیں جو ورائے نظر بھی دیکھ سکے

    ہر ایک نے اسے دیکھا ہے دیکھنے کے لیے

    بدل رہے ہیں زمانے کے رنگ کیا کیا دیکھ

    نظر اٹھا کہ یہ دنیا ہے دیکھنے کے لیے

    ذرا جو فرصت نظارگی میسر ہو

    تو ایک پل میں بھی کیا کیا ہے دیکھنے کے لیے

    گزر رہا ہے جو چہرے پہ ہاتھ رکھے ہوئے

    یہ دل اسی کو ترستا ہے دیکھنے کے لیے

    نہیں ہے تاب نظارہ ہی آفتابؔ حسین

    وگرنہ دہر میں کیا کیا ہے دیکھنے کے لیے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تمہارے بعد رہا کیا ہے دیکھنے کے لیے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY