تمہارے اعجاز حسن کی میرے دل پہ لاکھوں عنایتیں ہیں

علی سردار جعفری

تمہارے اعجاز حسن کی میرے دل پہ لاکھوں عنایتیں ہیں

علی سردار جعفری

MORE BYعلی سردار جعفری

    تمہارے اعجاز حسن کی میرے دل پہ لاکھوں عنایتیں ہیں

    تمہاری ہی دین میرے ذوق نظر کی ساری لطافتیں ہیں

    جواں ہے سورج جبیں پہ جس کے تمہارے ماتھے کی روشنی ہے

    سحر حسیں ہے کہ اس کے رخ پر تمہارے رخ کی صباحتیں ہیں

    میں جن بہاروں کی پرورش کر رہا ہوں زندان غم میں ہمدم

    کسی کے گیسو و چشم و رخسار و لب کی رنگیں حکایتیں ہیں

    نہ جانے چھلکائے جام کتنے نہ جانے کتنے سبو اچھالے

    مگر مری تشنگی کہ اب بھی تری نظر سے شکایتیں ہیں

    میں اپنی آنکھوں میں سیل اشک رواں نہیں بجلیاں لیے ہوں

    جو سر بلند اور غیور ہیں اہل غم یہ ان کی روایتیں ہیں

    میں رات کی گود میں ستارے نہیں شرارے بکھیرتا ہوں

    سحر کے دل میں جو اپنے اشکوں سے بو رہا ہوں بغاوتیں ہیں

    یہ شاعری نو کی پیغمبری زمانے کی داوری ہے

    لبوں پہ میرے صحیفۂ انقلاب کی سرخ آیتیں ہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Ali Sardar Jafri Vol.II (Pg. 151)
    • Author : Ali Ahmad Fatmi
    • مطبع : Qaumi Council Baray-e-farog Urdu Zaban, New Delhi (2005)
    • اشاعت : 2005

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے