تمہارے شہر میں اتنے مکاں گرے کیسے

انیس انصاری

تمہارے شہر میں اتنے مکاں گرے کیسے

انیس انصاری

MORE BYانیس انصاری

    تمہارے شہر میں اتنے مکاں گرے کیسے

    مرے عزیز ٹھکانے دھواں ہوئے کیسے

    میں شہر جبر سے گزرا تو سرخ رو ہو کر

    انہیں یہ فکر لہو کا نشاں مٹے کیسے

    سنا رہا ہوں کہانی ہزار راتوں کی

    کہ شاہزادے کے سر سے سناں ہٹے کیسے

    حساب خوب رکھا تم نے اپنی لاگت کا

    مرے نصاب میں سود و زیاں چلے کیسے

    ہر ایک شخص تمہاری طرح نہیں ہوتا

    کوئی کسی سے محبت کہاں کرے کیسے

    جہاں بھی شام ہوئی گھر بنا لیا اپنا

    مکاں بہت تھے مگر بے مکاں رہے کیسے

    انیسؔ تم تو بہت تیز چال چلتے تھے

    ذرا ہمیں بھی بتاؤ میاں گرے کیسے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY