تمہیں ایسا بے رحم جانا نہ تھا

راسخ عظیم آبادی

تمہیں ایسا بے رحم جانا نہ تھا

راسخ عظیم آبادی

MORE BYراسخ عظیم آبادی

    تمہیں ایسا بے رحم جانا نہ تھا

    غرض کیا کہیں دل لگانا نہ تھا

    اگر اس گلی سے نکلتے تو پھر

    دو عالم میں اپنا ٹھکانا نہ تھا

    لیا امتحان وفا ہی میں جی

    ہمیں یاں تلک آزمانا نہ تھا

    وہ تھا کون سا تیرا تیر ستم

    کہ میں آہ اس کا نشانا نہ تھا

    کیا کس کی آنکھوں نے راسخؔ پہ سحر

    وہ آگے تو ایسا دوانا نہ تھا

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    تمہیں ایسا بے رحم جانا نہ تھا فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY