تو اگر دل نواز ہو جائے

علیم اختر

تو اگر دل نواز ہو جائے

علیم اختر

MORE BYعلیم اختر

    تو اگر دل نواز ہو جائے

    سوز ہم رنگ ساز ہو جائے

    دل جو آگاہ راز ہو جائے

    ہر حقیقت مجاز ہو جائے

    لذت غم کا یہ تقاضا ہے

    مدت غم دراز ہو جائے

    نغمۂ عشق چھیڑتا ہوں میں

    زندگی نے نواز ہو جائے

    اس کی بگڑی بنے نہ کیوں اے عشق

    جس کا تو کارساز ہو جائے

    حسن مغرور ہے مگر توبہ

    عشق اگر بے نیاز ہو جائے

    درد کا پھر مزہ ہے جب اخترؔ

    درد خود چارہ ساز ہو جائے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    تو اگر دل نواز ہو جائے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY