اس گل کو بھیجنا ہے مجھے خط صبا کے ہاتھ

مظہر مرزا جان جاناں

اس گل کو بھیجنا ہے مجھے خط صبا کے ہاتھ

مظہر مرزا جان جاناں

MORE BY مظہر مرزا جان جاناں

    اس گل کو بھیجنا ہے مجھے خط صبا کے ہاتھ

    اس واسطے لگا ہوں چمن کی ہوا کے ہاتھ

    برگ حنا اوپر لکھو احوال دل مرا

    شاید کہ جا لگے وہ کسی میرزا کے ہاتھ

    آزاد ہو رہا ہوں دو عالم کی قید سے

    مینا لگا ہے جب سے کہ کچھ بے نوا کے ہاتھ

    مرتا ہوں میرزائی گل دیکھ ہر سحر

    سورج کے ہاتھ چونری تو پنکھا صبا کے ہاتھ

    مظہرؔ چھپا کے رکھ دل نازک کو اپنے تو

    یہ شیشہ بیچنا ہے کسی میرزا کے ہاتھ

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    اس گل کو بھیجنا ہے مجھے خط صبا کے ہاتھ فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY