اس مہ جبیں سے آج ملاقات ہو گئی

اختر شیرانی

اس مہ جبیں سے آج ملاقات ہو گئی

اختر شیرانی

MORE BYاختر شیرانی

    INTERESTING FACT

    آٹھویں شعر میں اختر شیرانی کی محبوبہ کی طرف اشارہ ہے ،جن کا نام سلمیٰ تھا ۔ ان کا تعلق گجرات سے تھا

    اس مہ جبیں سے آج ملاقات ہو گئی

    بے درد آسمان یہ کیا بات ہو گئی

    آوارگان عشق کا مسکن نہ پوچھئے

    پڑ رہتے ہیں وہیں پہ جہاں رات ہو گئی

    ذکر شب وصال ہو کیا قصہ مختصر

    جس بات سے وہ ڈرتے تھے وہ بات ہو گئی

    مسجد کو ہم چلے گئے مستی میں بھول کر

    ہم سے خطا یہ پیر خرابات ہو گئی

    پچھلے غموں کا ذکر ہی کیا جب وہ مل گئے

    اے آسماں تلافئ مافات ہو گئی

    زاہد کو زندگی ہی میں کوثر چکھا دیا

    رندوں سے آج یہ بھی کرامات ہو گئی

    بے چین رکھنے والے پریشاں ہوں خود نہ کیوں

    آخر کو تیری زلف مری رات ہو گئی

    جھولا جھلائیں چل کے حسینوں کو باغ میں

    گجرات میں سنا ہے کہ برسات ہو گئی

    کیا فائدہ اب اخترؔ اگر پارسا بنے

    جب ساری عمر نذر خرابات ہو گئی

    RECITATIONS

    خالد مبشر

    خالد مبشر

    خالد مبشر

    اس مہ جبیں سے آج ملاقات ہو گئی خالد مبشر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY