اٹھی کچھ ایسے بدن کی خوشبو

محمد علوی

اٹھی کچھ ایسے بدن کی خوشبو

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    اٹھی کچھ ایسے بدن کی خوشبو

    سمٹ گئی پیرہن کی خوشبو

    سحر ہوئی تو عجب ادا سے

    کلی میں اتری کرن کی خوشبو

    ہواؤں سے دوستی نہ کرنا

    لٹا نہ دینا چمن کی خوشبو

    مزے اڑاؤ گے ہجرتوں کے

    لیے پھرو گے وطن کی خوشبو

    اندھیری راتوں میں دیکھ لینا

    دکھائی دے گی بدن کی خوشبو

    یہ کون علویؔ چلا گیا ہے

    سمیٹ کر انجمن کی خوشبو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY