وبال جان ہر اک بال ہے میاں

رضا عظیم آبادی

وبال جان ہر اک بال ہے میاں

رضا عظیم آبادی

MORE BYرضا عظیم آبادی

    وبال جان ہر اک بال ہے میاں

    تعلق دل کا کیا جنجال ہے میاں

    طلب میں کون دنیا کی ہو پامال

    یہ بیت المال کچھ بھی مال ہے میاں

    یہ کالائے جہاں کا منہ ہو کالا

    اگر سمجھو تو جی کا کال ہے میاں

    سنا ہوگا جو کچھ مجنوں کا احوال

    وہی اپنے بھی حسب حال ہے میاں

    تڑپ کر رو بہ رو ہم اس کے مر گئے

    نہ پوچھو کیا مرا احوال ہے میاں

    قدم رکھتے تمہارے دل تڑپ گئے

    یہ کوئی چال ہے بھونچال ہے میاں

    نہیں جاتا ڈفالی پن کا سودا

    عجب سر پر مرے دھمال ہے میاں

    کھلا کب مولوی سے عقدۂ دل

    بہت یہ مسئلہ اشکال ہے میاں

    اگر ہے قول تو معصوم کا ہے

    سوا اس کے تو قیل و قال ہے میاں

    رضاؔ کیا مل گئے اس جنگ جو سے

    تمہارا آج چہرہ لال ہے میاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY