وقت بے وقت یہ پوشاک مری تاک میں ہے

عاصم واسطی

وقت بے وقت یہ پوشاک مری تاک میں ہے

عاصم واسطی

MORE BYعاصم واسطی

    وقت بے وقت یہ پوشاک مری تاک میں ہے

    جانتا ہوں کہ مری خاک مری تاک میں ہے

    مجھ کو دنیا کے عذابوں سے ڈرانے والو

    ایک عالم پس افلاک مری تاک میں ہے

    سانپ ہر دشت میں کرتا ہے تعاقب میرا

    بحر بے آب کا تیراک مری تاک میں ہے

    جمع کرتا ہے شواہد مرے ہونے کے خلاف

    در حقیقت مرا ادراک مری تاک میں ہے

    ہے مرے گرد حفاظت کے لیے ایک حصار

    ہو اگر کوئی غضب ناک مری تاک میں ہے

    اس سے کہنا مجھے حاصل ہے تحفظ غیبی

    جو پس پردۂ بے چاک مری تاک میں ہے

    وہ تو یوں ہے کہ بچاتا ہے بچانے والا

    ورنہ اک لشکر سفاک مری تاک میں ہے

    اک طرف روح وضو میں نہیں ہوتی شامل

    اک طرف سجدۂ ناپاک مری تاک میں ہے

    آشنا ایک ہے اس شہر میں عاصمؔ میرا

    اور وہ دشمن بیباک مری تاک میں ہے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    وقت بے وقت یہ پوشاک مری تاک میں ہے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY