وقت قیام دست قضا نے نہیں دیا

خالد محمود

وقت قیام دست قضا نے نہیں دیا

خالد محمود

MORE BY خالد محمود

    وقت قیام دست قضا نے نہیں دیا

    چلنے لگے تو ساتھ ہوا نے نہیں دیا

    پہلے ہی مرحلے میں قلم ہو کے رہ گئے

    دست ہنر کو ہاتھ دکھانے نہیں دیا

    گرنا تو کیا برا تھا مگر اس کو کیا کہیں

    جو گر گیا تو اٹھنے اٹھانے نہیں دیا

    اب ان کی کج روی سے شکایات ہیں ہمیں

    ہم نے ہی ان کو راہ پہ آنے نہیں دیا

    دو چار کاریں کوٹھیاں دس بیس لاکھ بس

    اس سے زیادہ خوف خدا نے نہیں دیا

    میں صرف ٹیلیفون کا احسان مند ہوں

    ان کا پیام باد صبا نے نہیں دیا

    اس یار شوخ چشم سے خالدؔ کا ارتباط

    اک راز تھا کہ جس کو چھپانے نہیں دیا

    RECITATIONS

    خالد محمود

    خالد محمود

    خالد محمود

    وقت قیام دست قضا نے نہیں دیا خالد محمود

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY