وقت کا قافلہ آتا ہے گزر جاتا ہے

نشور واحدی

وقت کا قافلہ آتا ہے گزر جاتا ہے

نشور واحدی

MORE BY نشور واحدی

    وقت کا قافلہ آتا ہے گزر جاتا ہے

    آدمی اپنی ہی منزل میں ٹھہر جاتا ہے

    ایک بگڑی ہوئی قسمت پہ نہ ہنسنا اے دوست

    جانے کس وقت یہ انسان سنور جاتا ہے

    اس طرف عیش کی شمعیں تو ادھر دل کے چراغ

    دیکھنا یہ ہے کہ پروانہ کدھر جاتا ہے

    جام و صہبا کی مجھے فکر نہیں اے غم دل

    میرا پیمانہ تو اشکوں ہی سے بھر جاتا ہے

    ایک رشتہ بھی محبت کا اگر ٹوٹ گیا

    دیکھتے دیکھتے شیرازہ بکھر جاتا ہے

    حال میرے لیے ہے لمحۂ آئندہ نشورؔ

    وقت شاعر کے لیے پہلے گزر جاتا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Sawad-e-manzil (Pg. 283)
    • Author : Nushoor Wahedi
    • مطبع : Maktaba Jamia Ltd, Delhi (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY