وقت کے دامن سے داغ تیرگی دھو جائیں گے

ماہر عبدالحی

وقت کے دامن سے داغ تیرگی دھو جائیں گے

ماہر عبدالحی

MORE BYماہر عبدالحی

    وقت کے دامن سے داغ تیرگی دھو جائیں گے

    درد کا سورج زمین شب میں ہم بو جائیں گے

    آج رونے کی جگہ پر جن کو آتی ہے ہنسی

    کل وہی ہنسنے کے موقع پر لہو رو جائیں گے

    کچھ نہ کچھ طوطی کی بھی سنتے اگر یہ جانتے

    ایک دن نقار خانے بے صدا ہو جائیں گے

    رات کی رنگینیاں منہ دیکھتی رہ جائیں گی

    ہم تھکن سے چور ننگے فرش پر سو جائیں گے

    کس نے سوچا تھا یہ ماہرؔ جستجو کے جوش میں

    جنگلوں میں واپسی کے راستے ہو جائیں گے

    مآخذ
    • کتاب : Hari Sonahri Khak (Ghazal) (Pg. 230)
    • Author : Mahir Abdul Hayee
    • مطبع : Bazme-e-Urdu,Mau (2008)
    • اشاعت : 2008

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY