وطن کو کچھ نہیں خطرہ نظام زر ہے خطرے میں

حبیب جالب

وطن کو کچھ نہیں خطرہ نظام زر ہے خطرے میں

حبیب جالب

MORE BYحبیب جالب

    وطن کو کچھ نہیں خطرہ نظام زر ہے خطرے میں

    حقیقت میں جو رہزن ہے وہی رہبر ہے خطرے میں

    جو بیٹھا ہے صف ماتم بچھائے مرگ ظلمت پر

    وہ نوحہ گر ہے خطرے میں وہ دانشور ہے خطرے میں

    اگر تشویش لاحق ہے تو سلطانوں کو لاحق ہے

    نہ تیرا گھر ہے خطرے میں نہ میرا گھر ہے خطرے میں

    جہاں اقبالؔ بھی نذر خط تنسیخ ہو جالبؔ

    وہاں تجھ کو شکایت ہے ترا جوہر ہے خطرے میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے