وہ درد وہ وفا وہ محبت تمام شد

طاہر عدیم

وہ درد وہ وفا وہ محبت تمام شد

طاہر عدیم

MORE BYطاہر عدیم

    وہ درد وہ وفا وہ محبت تمام شد

    لے دل میں تیرے قرب کی حسرت تمام شد

    یہ بعد میں کھلے گا کہ کس کس کا خوں ہوا

    ہر اک بیان ختم عدالت تمام شد

    تو اب تو دشمنی کے بھی قابل نہیں رہا

    اٹھتی تھی جو کبھی وہ عدالت تمام شد

    اب ربط اک نیا مجھے آوارگی سے ہے

    پابندیٔ خیال کی عادت تمام شد

    جائز تھی یا نہیں تھی ترے حق میں تھی مگر

    کرتا تھا جو کبھی وہ وکالت تمام شد

    وہ روز روز مرنے کا قصہ ہوا تمام

    وہ روز دل کو چیرتی وحشت تمام شد

    وہ میرے قرب میں ہے بہت بے سکون سا

    اس کے سکون کو ہے قرابت تمام شد

    اب آ کہ اپنا اپنا اثاثہ سمیٹ لیں

    اب ہم پہ وقت کی ہے سخاوت تمام شد

    طاہرؔ میں کنج زیست میں چپ چاپ ہوں پڑا

    مجنوں سی وہ خجالت و حالت تمام شد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے