وہ ہم سے آج بھی دامن کشاں چلے ہے میاں

جاں نثاراختر

وہ ہم سے آج بھی دامن کشاں چلے ہے میاں

جاں نثاراختر

MORE BY جاں نثاراختر

    وہ ہم سے آج بھی دامن کشاں چلے ہے میاں

    کسی پہ زور ہمارا کہاں چلے ہے میاں

    جہاں بھی تھک کے کوئی کارواں ٹھہرتا ہے

    وہیں سے ایک نیا کارواں چلے ہے میاں

    جو ایک سمت گماں ہے تو ایک سمت یقیں

    یہ زندگی تو یوں ہی درمیاں چلے ہے میاں

    بدلتے رہتے ہیں بس نام اور تو کیا ہے

    ہزاروں سال سے اک داستاں چلے ہے میاں

    ہر اک قدم ہے نئی آزمائشوں کا ہجوم

    تمام عمر کوئی امتحاں چلے ہے میاں

    وہیں پہ گھومتے رہنا تو کوئی بات نہیں

    زمیں چلے ہے تو آگے کہاں چلے ہے میاں

    وہ ایک لمحۂ حیرت کہ لفظ ساتھ نہ دیں

    نہیں چلے ہے نہ ایسے میں ہاں چلے ہے میاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY