وہ جو ہر وقت سوچتا ہے مجھے

رشمی صبا

وہ جو ہر وقت سوچتا ہے مجھے

رشمی صبا

MORE BY رشمی صبا

    وہ جو ہر وقت سوچتا ہے مجھے

    خود سے بچھڑا ہوا ملا ہے مجھے

    ایک آہٹ سی آتی رہتی ہے

    کوئی تو ہے جو ڈھونڈھتا ہے مجھے

    اپنا آغاز ہو نہ ہو لیکن

    اپنے انجام کا پتہ ہے مجھے

    گہرے پانی کی اور بڑھتے ہی

    خود بہ خود دریا روکتا ہے مجھے

    حال دل جب سنانا چاہا تو

    اس نے ہنس کے کہا پتہ ہے مجھے

    خود پر آخر غرور کیوں نہ کروں

    اس کے ہر خواب نے چنا ہے مجھے

    آسماں سے اتر کے چاند صباؔ

    دے کے تھپکی سلا رہا ہے مجھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY