وہ لمحہ جس سے رنج زندگی نکھرا ہوا سا

پون کمار

وہ لمحہ جس سے رنج زندگی نکھرا ہوا سا

پون کمار

MORE BY پون کمار

    وہ لمحہ جس سے رنج زندگی نکھرا ہوا سا

    کبھی ٹھہرا ہوا ہے تو کبھی گزرا ہوا سا

    بہا کر لے گیا سیلاب میں جو رات کیا کیا

    وہ دریا لگ رہا ہے دن میں کچھ اترا ہوا سا

    مری پہچان وہ پوچھے تو کیسے میں بتاؤں

    میں اپنے آپ میں سمٹا ہوں پر بکھرا ہوا سا

    کہیں بے رنگ سی تصویر ہے کیوں اے مصور

    کہیں تصویر کا ہر نقش ہے ابھرا ہوا سا

    یقیناً دیر تک تم کو ہی دیکھا ہوگا اس نے

    تبھی تو آج درپن بھی ہے کچھ سنورا ہوا سا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY