وہ لوگ جو زندہ ہیں وہ مر جائیں گے اک دن

ساقی فاروقی

وہ لوگ جو زندہ ہیں وہ مر جائیں گے اک دن

ساقی فاروقی

MORE BY ساقی فاروقی

    وہ لوگ جو زندہ ہیں وہ مر جائیں گے اک دن

    اک رات کے راہی ہیں گزر جائیں گے اک دن

    یوں دل میں اٹھی لہر یوں آنکھوں میں بھرے رنگ

    جیسے مرے حالات سنور جائیں گے اک دن

    دل آج بھی جلتا ہے اسی تیز ہوا میں

    اے تیز ہوا دیکھ بکھر جائیں گے اک دن

    یوں ہے کہ تعاقب میں ہے آسائش دنیا

    یوں ہے کہ محبت سے مکر جائیں گے اک دن

    یوں ہوگا کہ ان آنکھوں سے آنسو نہ بہیں گے

    یہ چاند ستارے بھی ٹھہر جائیں گے اک دن

    اب گھر بھی نہیں گھر کی تمنا بھی نہیں ہے

    مدت ہوئی سوچا تھا کہ گھر جائیں گے اک دن

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    وہ لوگ جو زندہ ہیں وہ مر جائیں گے اک دن نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY