وہ من گئے تو وصل کا ہوگا مزا نصیب

حسن بریلوی

وہ من گئے تو وصل کا ہوگا مزا نصیب

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    وہ من گئے تو وصل کا ہوگا مزا نصیب

    دل کی گرہ کے ساتھ کھلے گا مرا نصیب

    کھائیں گے رحم آپ اگر دل بگڑ گیا

    ہو جائے گا ملاپ اگر لڑ گیا نصیب

    شب بھر جمال یار ہو آنکھوں کے روبرو

    جاگیں نصیب جس کو ہو یہ رتجگا نصیب

    پہرا دیا ہے دولت بیدار حسن کا

    سوئے جو وہ بغل میں تو جاگا مرا نصیب

    پہنچا کے میری خاک در یار تک صبا

    رخصت ہوئی یہ کہہ کر اب آگے ترا نصیب

    اے دل وہ تجھ سے کہتے ہیں میری بلا ملے

    ایسے ترے نصیب کہاں اے بلا نصیب

    جب درد دل بڑھا تو انہیں رحم آ گیا

    پیدا ہوئی چمک تو چمکنے لگا نصیب

    دشمن کو لطف وصل حسنؔ کو غم فراق

    ہر شخص کا جدا ہے مقدر جدا نصیب

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 131)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY