وہ موج خنک شہر شرر تک نہیں آئی

فضیل جعفری

وہ موج خنک شہر شرر تک نہیں آئی

فضیل جعفری

MORE BYفضیل جعفری

    وہ موج خنک شہر شرر تک نہیں آئی

    دریاؤں کی خوشبو مرے گھر تک نہیں آئی

    سناٹے سجائے گئے گل دانوں میں گھر گھر

    کھوئے ہوئے پھولوں کی خبر تک نہیں آئی

    ہم اہل جنوں پار اتر جائیں گے لیکن

    کشتی ابھی ساحل سے بھنور تک نہیں آئی

    صد شکر ترا روشنئ طبع کہ ہم کو

    برباد کیا اور نظر تک نہیں آئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY