وہ نغمگی کا ذائقہ اس کی صدا میں تھا

سوہن راہی

وہ نغمگی کا ذائقہ اس کی صدا میں تھا

سوہن راہی

MORE BYسوہن راہی

    وہ نغمگی کا ذائقہ اس کی صدا میں تھا

    پھیلا ہوا وہ نور سا ساری فضا میں تھا

    چپ چاپ بے زباں کوئی میری انا میں تھا

    ورنہ کہاں یہ حوصلہ میری بنا میں تھا

    وہ میرے سانس کی دھنک میں جھولتا تھا کون

    کس کا تھا رنگ روپ جو حسن خلا میں تھا

    جو چھو رہا تھا میرے بدن ہی کو بار بار

    تیرے خلوص کا کوئی جھونکا ہوا میں تھا

    جاں سے گزر کے بھی کبھی شاید نہ یہ کھلے

    جادو یہ کس نگاہ کا میری نگہ میں تھا

    کل رات بہہ رہا تھا جو بارش کے نام سے

    میرا ہی ایک اشک تر ساری گھٹا میں تھا

    مآخذ:

    • کتاب : Shora-e-London (Pg. 98)
    • Author : Jauhar Zahiri
    • مطبع : Books From India (U.K) Ltd. 45, Museum Street,Londan W.C-1 (1985)
    • اشاعت : 1985

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY