وہ نگہ جب مجھے پکارتی تھی

حماد نیازی

وہ نگہ جب مجھے پکارتی تھی

حماد نیازی

MORE BY حماد نیازی

    وہ نگہ جب مجھے پکارتی تھی

    دل کی حیرانیاں ابھارتی تھی

    اپنی نادیدہ انگلیوں کے ساتھ

    میرے بالوں کو وہ سنوارتی تھی

    روز میں اس کو جیت جاتا تھا

    اور وہ روز خود کو ہارتی تھی

    پتیاں مسکرانے لگتی تھیں

    شاخ سے پھول جب اتارتی تھی

    جن دنوں میں اسے پکارتا تھا

    ایک دنیا مجھے پکارتی تھی

    صحن میں چھاؤں تھی درختوں کی

    جو مری شاعری نکھارتی تھی

    بارگاہوں میں غسل گریہ سے

    روح اپنی تھکن اتارتی تھی

    اک لگن تھی چبھن تھی جو بھی تھی

    روز سینے میں دن گزارتی تھی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY