وہ روح کے گنبد میں صدا بن کے ملے گا

آزاد گلاٹی

وہ روح کے گنبد میں صدا بن کے ملے گا

آزاد گلاٹی

MORE BYآزاد گلاٹی

    وہ روح کے گنبد میں صدا بن کے ملے گا

    اک دن وہ مجھے میرا خدا بن کے ملے گا

    بھٹکوں گا میں اس شہر کی گلیوں میں اکیلا

    وہ مجھ کو مرے دل کا خلا بن کے ملے گا

    وہ دور بھی آئے گا کہ ہر لمحۂ ہستی

    مجھ سے ترے ملنے کی دعا بن کے ملے گا

    کس زعم سے بچھڑا ہے مگر دیکھنا یہ بھی

    تو خود سے خود اپنی ہی سزا بن کے ملے گا

    اشعار میں دھڑکیں گے ملاقات کے لمحے

    تو سب سے مرے فن کی بقا بن کے ملے گا

    مآخذ
    • کتاب : Aab-e-Sharab (Pg. 66)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY