وہ تو مل کر بھی نہیں ملتی ہے

تری پراری

وہ تو مل کر بھی نہیں ملتی ہے

تری پراری

MORE BYتری پراری

    وہ تو مل کر بھی نہیں ملتی ہے

    جانے کس دھن میں رہا کرتی ہے

    چوم لیتی ہے مرا ماتھا جب

    ایک خوشبو سی برس پڑتی ہے

    سوچ لیتا ہوں اسے دم بھر کو

    اور یہ روح مہک اٹھتی ہے

    میں جسے کہہ نہ سکوں گا ہرگز

    آج وہ بات مجھے کہنی ہے

    لوگ کہتے ہیں محبت جس کو

    سر پھری بگڑی ہوئی لڑکی ہے

    اپنی دنیا کے مسائل میں وہ

    اپنی زلفوں کی طرح الجھی ہے

    میں ندی نیند کی اور وہ مجھ میں

    خواب مچھلی کی طرح رہتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY