وہ یہ کہتے ہیں زمانے کی تمنا میں ہوں

ہجر ناظم علی خان

وہ یہ کہتے ہیں زمانے کی تمنا میں ہوں

ہجر ناظم علی خان

MORE BYہجر ناظم علی خان

    وہ یہ کہتے ہیں زمانے کی تمنا میں ہوں

    کیا کوئی اور بھی ایسا ہے کہ جیسا میں ہوں

    اپنے بیمار محبت کا مداوا نہ ہوا

    اور پھر اس پہ یہ دعویٰ کہ مسیحا میں ہوں

    عکس سے اپنے وہ یوں کہتے ہیں آئینہ میں

    آپ اچھے ہیں مگر آپ سے اچھا میں ہوں

    کہتے ہیں وصل میں سینے سے لپٹ کر میرے

    سچ کہو دل تمہیں پیارا ہے کہ پیارا میں ہوں

    وہ ستاتا ہے الگ چرخ ستم گار الگ

    سیکڑوں دشمن جاں ہیں مرے تنہا میں ہوں

    بخت برگشتہ وہ ناراض زمانہ دشمن

    کوئی میرا ہے نہ اے ہجرؔ کسی کا میں ہوں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY