وہ زمانہ نظر نہیں آتا

داغؔ دہلوی

وہ زمانہ نظر نہیں آتا

داغؔ دہلوی

MORE BYداغؔ دہلوی

    وہ زمانہ نظر نہیں آتا

    کچھ ٹھکانا نظر نہیں آتا

    جان جاتی دکھائی دیتی ہے

    ان کا آنا نظر نہیں آتا

    عشق در پردہ پھونکتا ہے آگ

    یہ جلانا نظر نہیں آتا

    اک زمانہ مری نظر میں رہا

    اک زمانہ نظر نہیں آتا

    دل نے اس بزم میں بٹھا تو دیا

    اٹھ کے جانا نظر نہیں آتا

    رہیے مشتاق جلوۂ دیدار

    ہم نے مانا نظر نہیں آتا

    لے چلو مجھ کو راہروان عدم

    یاں ٹھکانا نظر نہیں آتا

    دل پہ بیٹھا کہاں سے تیر نگاہ

    یہ نشانہ نظر نہیں آتا

    تم ملاؤ گے خاک میں ہم کو

    دل ملانا نظر نہیں آتا

    آپ ہی دیکھتے ہیں ہم کو تو

    دل کا آنا نظر نہیں آتا

    دل پر آرزو لٹا اے داغؔ

    وہ خزانہ نظر نہیں آتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY