یاد کرنا ہر گھڑی اس یار کا

ولی محمد ولی

یاد کرنا ہر گھڑی اس یار کا

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    یاد کرنا ہر گھڑی اس یار کا

    ہے وظیفہ مجھ دل بیمار کا

    آرزوئے چشمۂ کوثر نئیں

    تشنہ لب ہوں شربت دیدار کا

    عاقبت کیا ہووے گا معلوم نئیں

    دل ہوا ہے مبتلا دل دار کا

    کیا کہے تعریف دل ہے بے نظیر

    حرف حرف اس مخزن اسرار کا

    گر ہوا ہے طالب آزادگی

    بند مت ہو سبحہ و زنار کا

    مسند گل منزل شبنم ہوئی

    دیکھ رتبہ دیدۂ بیدار کا

    اے ولیؔ ہونا سریجن پر نثار

    مدعا ہے چشم گوہر بار کا

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    یاد کرنا ہر گھڑی اس یار کا فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY