یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں

آغا حشر کاشمیری

یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں

آغا حشر کاشمیری

MORE BYآغا حشر کاشمیری

    یاد میں تیری جہاں کو بھولتا جاتا ہوں میں

    بھولنے والے کبھی تجھ کو بھی یاد آتا ہوں میں

    ایک دھندلا سا تصور ہے کہ دل بھی تھا یہاں

    اب تو سینے میں فقط اک ٹیس سی پاتا ہوں میں

    او وفا نا آشنا کب تک سنوں تیرا گلہ

    بے وفا کہتے ہیں تجھ کو اور شرماتا ہوں میں

    آرزوؤں کا شباب اور مرگ حسرت ہائے ہائے

    جب بہار آئے گلستاں میں تو مرجھاتا ہوں میں

    حشرؔ میری شعر گوئی ہے فقط فریاد شوق

    اپنا غم دل کی زباں میں دل کو سمجھاتا ہوں میں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    علی سیٹھی

    علی سیٹھی

    مختار بیگم

    مختار بیگم

    مآخذ:

    • کتاب : intekhab-e-zarrin (Pg. 206)
    • Author : Sangeet publication
    • مطبع : Sangeet publication (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY