یہی بے لوث محبت یہی غم خوارئ خلق (ردیف .. ی)

نہال سیوہاروی

یہی بے لوث محبت یہی غم خوارئ خلق (ردیف .. ی)

نہال سیوہاروی

MORE BYنہال سیوہاروی

    یہی بے لوث محبت یہی غم خوارئ خلق

    اور معراج کسے کہتے ہیں انسانوں کی

    نام ہے کیا اسی ہنگامے کا آغاز شباب

    ایک آندھی سی چلی آتی ہے ارمانوں کی

    جس قدر عشق سے ہوتی ہے فزوں وسعت فکر

    عقل رکھتی ہے بنائیں نئے زندانوں کی

    اپنی موت اپنی تباہی کی طرف کیا دیکھیں

    کہ نگاہیں طرف شمع ہیں پروانوں کی

    ہو گئی عمر بہاروں کے تصور میں تمام

    سیر کرتے رہے نادید گلستانوں کی

    ماسوا اس کے نہیں اور کچھ افسانۂ ہند

    ایک تاریخ ہے اجڑے ہوئے کاشانوں کی

    مأخذ :
    • کتاب : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 901)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے