یک رات میں گیا تھا رنداں کے انجمن میں

قربی ویلوری

یک رات میں گیا تھا رنداں کے انجمن میں

قربی ویلوری

MORE BYقربی ویلوری

    یک رات میں گیا تھا رنداں کے انجمن میں

    بولے کہ اے ہوائی یو نکتہ رک تو من میں

    وحدت کے ملک میانے نیں غیر کو تھکانا

    عین خدا سمجھ تو جو ہے اس انجمن میں

    کیا ساقی و مغنی کیا جام کیا صراحی

    غیر خدا نکو کہہ گر ہے شراب دن میں

    کیا لالہ کیا یو سوسن کیا نرگس و سمن کیا

    ہے اوچہ فی الحقیقت گل ہے اگر چمن میں

    یو نکتہ کر یقیں میں ہر چیز کو جو دیکھیا

    بیگانہ کیں دسیا نیں بن دوست چوکدن میں

    بن ذات حق دسیا نیں یک ذات دو جہاں میں

    بن اسم حق سنیا نیں یک بول یک دہن میں

    غفلت کوں نیں ہے جاگا کاں سوں اچھیگی غفلت

    ذاکر تمام عالم ہے معرفت کے فن میں

    ہے عشق او خدا کا گر عشق ہے جواں میں

    ہے حسن او اسی کا گر حسن ہے مہن میں

    اے محرم خدائی یک ذرہ غور کر دیک

    نکتے بھرے ہیں نے کے قربیؔ کے ہر سخن میں

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے