یہ عمل موجۂ انفاس کا دھوکا ہی نہ ہو

رحمان حفیظ

یہ عمل موجۂ انفاس کا دھوکا ہی نہ ہو

رحمان حفیظ

MORE BY رحمان حفیظ

    یہ عمل موجۂ انفاس کا دھوکا ہی نہ ہو

    زندگی عشرت احساس کا دھوکا ہی نہ ہو

    جیسے اک خواب ہوا عہد گزشتہ کا ثبات

    دم آئندہ مری آس کا دھوکا ہی نہ ہو

    یہ نگیں بھی نہ ہو بس معجزۂ تار نظر

    یہ ہنر شیشہ و الماس کا دھوکا ہی نہ ہو

    مرے تخئیل کے ہی عکس نہ ہوں سبزہ و گل

    دہر اوہام کا وسواس کا دھوکا ہی نہ ہو

    ہر یقیں میں جو نکلتا ہے گماں کا پہلو

    یہ مری عقل کے خناس کا دھوکا ہی نہ ہو

    مآخذ:

    • کتاب : Pakistani Adab (Pg. 475)
    • Author : Dr. Rashid Amjad
    • مطبع : Pakistan Academy of Letters, Islambad, Pakistan (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY