یہ چراغ بے نظر ہے یہ ستارہ بے زباں ہے

بشیر بدر

یہ چراغ بے نظر ہے یہ ستارہ بے زباں ہے

بشیر بدر

MORE BYبشیر بدر

    یہ چراغ بے نظر ہے یہ ستارہ بے زباں ہے

    ابھی تجھ سے ملتا جلتا کوئی دوسرا کہاں ہے

    وہی شخص جس پہ اپنے دل و جاں نثار کر دوں

    وہ اگر خفا نہیں ہے تو ضرور بد گماں ہے

    کبھی پا کے تجھ کو کھونا کبھی کھو کے تجھ کو پانا

    یہ جنم جنم کا رشتہ ترے میرے درمیاں ہے

    مرے ساتھ چلنے والے تجھے کیا ملا سفر میں

    وہی دکھ بھری زمیں ہے وہی غم کا آسماں ہے

    میں اسی گماں میں برسوں بڑا مطمئن رہا ہوں

    ترا جسم بے تغیر مرا پیار جاوداں ہے

    انہیں راستوں نے جن پر کبھی تم تھے ساتھ میرے

    مجھے روک روک پوچھا ترا ہم سفر کہاں ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    چندن داس

    چندن داس

    مأخذ :
    • کتاب : Junoon (Pg. 35)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY