یہ دل دنیا سے باز آنے لگا ہے

فرحت احساس

یہ دل دنیا سے باز آنے لگا ہے

فرحت احساس

MORE BYفرحت احساس

    یہ دل دنیا سے باز آنے لگا ہے

    کہ اب سینے میں راز آنے لگا ہے

    اذاں ہونے لگی محراب جاں میں

    مرا وقت نماز آنے لگا ہے

    یوں ہی اک زخم پر دے دی تھی اصلاح

    سو اب لے کر بیاض آنے لگا ہے

    بہت سے زخم تھے اب صرف اک زخم

    لہو میں ارتکاز آنے لگا ہے

    بہت اب ہو چکی دنیا سے یاری

    ادھر سے اعتراض آنے لگا ہے

    بہت کاری ہے اب کے عقل کا وار

    جنوں کو امتیاز آنے لگا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY