یہ جو چہرے سے تمہیں لگتے ہیں بیمار سے ہم

وصی شاہ

یہ جو چہرے سے تمہیں لگتے ہیں بیمار سے ہم

وصی شاہ

MORE BYوصی شاہ

    یہ جو چہرے سے تمہیں لگتے ہیں بیمار سے ہم

    خوب روئے ہیں لپٹ کر در و دیوار سے ہم

    یار کی آنکھ میں نفرت نے ہمیں مار دیا

    مرنے والے تھے کہاں یار کی تلوار سے ہم

    عشق میں حکم عدولی بھی ہمیں آتی ہے

    ٹلنے والے تو نہیں ہیں ترے انکار سے ہم

    رنج ہر رنگ کے جھولی میں بھرے ہیں ہم نے

    جب بھی گزرے ہیں کسی درد کے بازار سے ہم

    بادشاہ شاعر و مجنوں سبھی آتے ہیں یہاں

    لگ کے بیٹھے ہیں وصیؔ شاہ کے دربار سے ہم

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے