Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

یہ جو رنگین تبسم کی ادا ہے مجھ میں

مسعودہ حیات

یہ جو رنگین تبسم کی ادا ہے مجھ میں

مسعودہ حیات

MORE BYمسعودہ حیات

    یہ جو رنگین تبسم کی ادا ہے مجھ میں

    مجھ کو لگتا ہے کوئی میرے سوا ہے مجھ میں

    خود بھی حیراں ہوں ازل سے کہ یہ کیا ہے مجھ میں

    کون شہ رگ سے مری بول رہا ہے مجھ میں

    عمر بھر جس کو ترے غم کی امانت سمجھا

    اب وہی تار نفس ٹوٹ گیا ہے مجھ میں

    ایک خوشبو سی ابھرتی ہے نفس سے میرے

    ہو نہ ہو آج کوئی آن بسا ہے مجھ میں

    میرے قدموں پہ زمانے کی جبیں جھک جائے

    دیوتاؤں کی طرح ایک انا ہے مجھ میں

    تم تو کن کہہ کے نگاہوں سے چھپے ہو لیکن

    ہر گھڑی ایک نیا حشر بپا ہے مجھ میں

    کون تھا جو مرے احساس کو روشن کرتا

    عمر بھر صرف مرا دل ہی جلا ہے مجھ میں

    دل کبھی ظلمت فردا سے ہراساں نہ ہوا

    ایک خورشید نیا روز اگا ہے مجھ میں

    تلخ کامی سے تو کچھ اور نکھرتی ہے حیاتؔ

    کس لیے زہر کوئی گھول رہا ہے مجھ میں

    مأخذ :
    • کتاب : bu-e-saman (Pg. 29)
    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے