یہ کار زندگی تھا تو کرنا پڑا مجھے

امیر امام

یہ کار زندگی تھا تو کرنا پڑا مجھے

امیر امام

MORE BYامیر امام

    یہ کار زندگی تھا تو کرنا پڑا مجھے

    خود کو سمیٹنے میں بکھرنا پڑا مجھے

    پھر خواہشوں کو کوئی سرائے نہ مل سکی

    اک اور رات خود میں ٹھہرنا پڑا مجھے

    محفوظ خامشی کی پناہوں میں تھا مگر

    گونجی اک ایسی چیخ کہ ڈرنا پڑا مجھے

    اس بار راہ عشق کچھ اتنی طویل تھی

    اس کے بدن سے ہو کے گزرنا پڑا مجھے

    پوری امیر امام کی تصویر جب ہوئی

    اس میں لہو کا رنگ بھی بھرنا پڑا مجھے

    RECITATIONS

    امیر امام

    امیر امام

    امیر امام

    یہ کار زندگی تھا تو کرنا پڑا مجھے امیر امام

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY