یہ کہہ گیا بت ناآشنا سنا کے مجھے

جلیل مانک پوری

یہ کہہ گیا بت ناآشنا سنا کے مجھے

جلیل مانک پوری

MORE BYجلیل مانک پوری

    یہ کہہ گیا بت ناآشنا سنا کے مجھے

    کہ آپ میں نہیں رہتا ہے کوئی پا کے مجھے

    نقاب کہتی ہے میں پردۂ قیامت ہوں

    اگر یقین نہ ہو دیکھ لو اٹھا کے مجھے

    ملوں گا خاک میں آنسو کی طرح یاد رہے

    ملو نہ آنکھ کہیں آنکھ سے گرا کے مجھے

    ادا سے کھینچ رہا ہے کماں وہ تیر انداز

    قضا پکار رہی ہے ذرا بچا کے مجھے

    تمہارے واسطے اس دل کا مول ہی کیا ہے

    ادا سے دیکھ لو اک دن نظر اٹھا کے مجھے

    ترے حساب میں تیری قبا کا دامن ہوں

    کہ جب مزاج میں آیا چلا لٹا کے مجھے

    میں ڈر رہا ہوں تمہاری نشیلی آنکھوں سے

    کہ لوٹ لیں نہ کسی روز کچھ پلا کے مجھے

    بلند نام نہ ہوگا ستم شعاری سے

    تم آسمان نہ ہو جاؤ گے ستا کے مجھے

    بتوں کو تاکتے گزری ہے شرم آئے گی

    جلیلؔ لے نہ چلو سامنے خدا کے مجھے

    مآخذ:

    • کتاب : Kainat-e-Jalil Manakpuri (Pg. 106)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY