یہ ضروری تو نہیں ساتھ میں لشکر نکلے

خان جانباز

یہ ضروری تو نہیں ساتھ میں لشکر نکلے

خان جانباز

MORE BYخان جانباز

    یہ ضروری تو نہیں ساتھ میں لشکر نکلے

    کربلا یاد کرو صرف بہتر نکلے

    گرتے گرتے ہی سہی دوڑ کے اکثر نکلے

    گرد آنکھوں میں لئے جب بھی سفر پر نکلے

    سرخ دل دیکھ کے ہاتھوں میں اٹھانے والے

    پھر نہ کہنا جو ترے ہاتھ سے پتھر نکلے

    سوچتا ہوں وہ چمکتا ہو ستاروں جیسا

    چاہتا ہوں وہ مری سوچ سے بڑھ کر نکلے

    کیوں نہ میں شعر کہوں آتش غم میں جاناں

    کیوں نہ دل کا یہ دھواں جسم سے باہر نکلے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY