یوں تو وہ ہر کسی سے ملتی ہے

مصطفی زیدی

یوں تو وہ ہر کسی سے ملتی ہے

مصطفی زیدی

MORE BYمصطفی زیدی

    یوں تو وہ ہر کسی سے ملتی ہے

    ہم سے اپنی خوشی سے ملتی ہے

    سیج مہکی بدن سے شرما کر

    یہ ادا بھی اسی سے ملتی ہے

    وہ ابھی پھول سے نہیں ملتی

    جوہیے کی کلی سے ملتی ہے

    دن کو یہ رکھ رکھاؤ والی شکل

    شب کو دیوانگی سے ملتی ہے

    آج کل آپ کی خبر ہم کو!

    غیر کی دوستی سے ملتی ہے

    شیخ صاحب کو روز کی روٹی

    رات بھر کی بدی سے ملتی ہے

    آگے آگے جنون بھی ہوگا!

    شعر میں لو ابھی سے ملتی ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Mustafa Zaidi(Mouj meri sadaf sadaf) (Pg. 90)
    • Author : Mustafa Zaidi
    • مطبع : Alhamd Publications (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY