aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

یوں ہی الجھی رہنے دو کیوں آفت سر پر لاتے ہو

امداد امام اثر

یوں ہی الجھی رہنے دو کیوں آفت سر پر لاتے ہو

امداد امام اثر

MORE BYامداد امام اثر

    یوں ہی الجھی رہنے دو کیوں آفت سر پر لاتے ہو

    دل کی الجھن بڑھتی ہے جب زلفوں کو سلجھاتے ہو

    چھپ چھپ کر تم رات کو صاحب غیروں کے گھر جاتے ہو

    کیسی ہے یہ بات کہو تو کیوں کر منہ دکھلاتے ہو

    سنتے ہو کب بات کسی کی اپنی ہٹ پر رہتے ہو

    حضرت دل تم اپنے کئے پر آخر کو پچھتاتے ہو

    مدت پر تو آئے ہو ہم دیکھ لیں تم کو جی بھر کے

    آئے ہو تو ٹھہرو صاحب روز یہاں کیا آتے ہو

    کیسا آنا کیسا جانا میرے گھر کیا آؤ گے

    غیروں کے گھر جانے سے تم فرصت کس دن پاتے ہو

    آنکھیں جھپکی جاتی ہیں متوالی کی سی صورت ہے

    جاگے کس کی صحبت میں جو نیند کے اتنے ماتے ہو

    دل سے اثرؔ کیا کہتے ہو ہے جان کا سودا عشق بتاں

    تم بھی تو دیوانے ہو دیوانے کو سمجھاتے ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے