aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

زبان حال سے ہم شکوۂ بیداد کرتے ہیں

امداد امام اثر

زبان حال سے ہم شکوۂ بیداد کرتے ہیں

امداد امام اثر

MORE BYامداد امام اثر

    زبان حال سے ہم شکوۂ بیداد کرتے ہیں

    دہان زخم قاتل دم بدم فریاد کرتے ہیں

    سمجھ کر کیا اسیران قفس فریاد کرتے ہیں

    توجہ بھی کہیں فریاد پر صیاد کرتے ہیں

    عذاب قبر سے پاتے ہیں راحت عشق کے مجرم

    پس مرداں جفائیں یار کی جب یاد کرتے ہیں

    نہ کہہ بہر خدا تو بندگان عشق کو کافر

    بتوں کی یاد میں زاہد خدا کو یاد کرتے ہیں

    ذرا صیاد چل کر دیکھ تو کیا حال ہے ان کا

    اسیران قفس فریاد پر فریاد کرتے ہیں

    بتان سنگ دل کے ہاتھ سے دل ہی نہیں نالاں

    برابر دیر میں ناقوس بھی فریاد کرتے ہیں

    بناتے ہیں ہزاروں زخم خنداں خنجر غم سے

    دل ناشاد کو ہم اس طرح پر شاد کرتے ہیں

    ملے لذت جو ایذا سے تو باز آتے ہیں ایذا سے

    ستم ایجاد ہیں طرز ستم ایجاد کرتے ہیں

    اثرؔ کو دیکھ کر کیا روح کو صدمہ پہنچتا ہے

    خدا سمجھے بتوں سے کس قدر بیداد کرتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے